سیدہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کا نکاح

سیدہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا  کا نکاح
سیدہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کا نکاح

رسول اللہ ﷺ حضرت خدیجۃ الکبریٰ رضی اللہ عنہا کی وفات کے بعد غمگین رہنے لگے تھے، چنانچہ حضرت عثمان بن مطعون کی اہلیہ محترمہ حضرت خولہ بنت حکیم رضی اللہ عنہا  رسول اللہ  ﷺ  کی خدمت اقدس میں حاضر ہوئیں اور عرض کیا کہ:

یا رسول اللہ ! آپ ﷺ دوسرا نکاح کر لیجئے ۔

آپ ﷺ نے فرمایا  کس سے کروں؟

حضرت خولہ رضی اللہ عنہا نے عرض کیا بیوہ اور کنواری دونوں  لڑکیاں موجود ہیں آپ ( ﷺ) ان میں سے جن سے  چاہیں نکاح کر لیں۔

آپ ﷺ نے فرمایا وہ کون ہیں؟

حضرت خولہ رضی اللہ عنہا نے عرض کیا: بیوہ تو سودہ بنت زمعہ ہیں اور کنواری حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہا کی بیٹی عائشہ رضی اللہ عنہا ہے۔

حضور ﷺ نے فرمایا کہ بہتر ہے کہ تم عائشہ کے متعلق گفتگو کرو۔

چنانچہ حضرت خولہ رضی اللہ عنہا حضرت ابوبکر صدّیق رضی اللہ عنہ کے یہاں تشریف لے گئیں اور ان سے حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کے رشتے کے متعلق بات کی تو حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ فرمانے لگے کہ : خولہ ! عائشہ تو آنحضرت ﷺ کی بھتیجی ہے ( یعنی جب حضرت عائشہ  (رضی اللہ عنہا)  آپ  ﷺ کی بھتیجی ہیں تو پھر ان کا نکاح آپ ﷺ  سے کیسے ہو سکتا ہے؟)

حضرت خولہ رضی اللہ  عنہا نے واپس آکر نبی کریم ﷺ سے اس بارے میں دریافت کیا تو   آپ ﷺ نے فرمایا کہ : ابوبکر میرے اسلامی بھائی ہیں اور اسلامی بھائیوں کے ہاں نکاح کرنا جائز ہے۔

جب یہ مسئلہ حضرت ابوبکر صدّیق رضی اللہ عنہ کو معلوم ہوا تو انہوں نے  بسر و چشم اس مبارک  رشتے کو قبول کرلیا لیکن چونکہ اس سے پہلے حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کی نسبت جبیر ابن مطعم کے بیٹے سے طے ہو چکی تھی اس لئے ان سے بھی پوچھنا ضروری تھا۔ لہذا حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ جبیر ابن مطعم  کے ہاں تشریف لے گئے اور ان سے پوچھا کہ تم نے عائشہ کی نسبت اپنے بیٹے کی طرف کی تھی اب تم اس بارے میں کیا کہتے ہو ؟

جبیر ابن مطعم کا گھرانہ ابھی تک مشرف بااسلام نہیں ہوا تھا  اس لئے ان کی بیوی بولی کہ : اگر یہ لڑکی (حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا) ہمارے گھر آگئی تو ہمارا لڑکا بھی اپنے آباؤ اجداد کے دین سے پھر جائے گا، اور ہمیں کسی صورت بھی یہ بات منظور نہیں ہے۔

حضرت ابوبکر  رضی اللہ عنہ وہاں سے اُٹھ کر اپنے گھر تشریف لے آئے اور خولہ رضی اللہ عنہاسے فرمایا کہ : مجھے یہ رشتہ منظور ہے اور رسول اللہ ﷺ جس وقت چاہیں تشریف لے آئیں چنانچہ آنحضرت ﷺ تشریف لائے  اور حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ نے نکاح پڑھایا اور مہر کی مقدار چارسودرہم  مقرر ہوئی۔

Advertisement



loading...
loading...

Advertisement

Advertisement

ڈیلی نیوز پاکستان

ایک ایسی ویب سائٹ جہاں آپکو ہر اھم خبر بروقت ملے خبر سیاست سے متعلق ہو یا معیشت سے ملکی ہو یا غیر ملکی یا بین الاقوامی معیشت کے عنوان سے ہو یا معاشرت کے کھیل کی خبریں ہوں یا عوامی مسائل کی الجھنیں ہم آپکے سامنے پیش کرتے ہیں ہر ضروری اور غیر معمولی نیوز اپڈیٹس تجزیے تبصرے مکالمے مباحثے بلاگز مضامین مقالات بروقت برموقع برمحل
Top