اگر حضور ﷺ نے فرمایا ہے تو سچ ہی فرمایا ہے

اگر حضور  ﷺ نے فرمایا ہے تو سچ ہی فرمایا ہے
اگر حضور ﷺ نے فرمایا ہے تو سچ ہی فرمایا ہے

چاشت کا وقت تھا، آنحضرت ﷺ  بیت اللہ کے پاس تشریف فرما تھے، آپ ﷺ کا ذہن مبارک  ذکر و تسبیح  سے معطر ہو رہا تھا کہ خدا کے دشمن ابو جہل کی آپ ﷺ  پر نظر پڑی   جو اپنے گھر سے نکل کر بیت اللہ کےارد گرد بے مقصد پھر رہا تھا، وہ بڑے فخر و تکبر کے انداز میں حضور پر نور  ﷺ کے قریب آیا اور ازراہ  مذاح کہنے لگا : اے محمد ﷺ ! کیا کوئی نئی بات پیش آئی ہے؟ حضورِ اکرم ﷺ نے فرمایا : ' ہاں، آج کی رات مجھے معراج  کرائی گئی۔ ابو جہل،  ہنسا اور تمسخر کے انداز میں کہنے لگا: کس طرف ؟ حضور ﷺ نے فرمایا : بیت المقدس کی جانب، ابو جہل نے تھوڑی دیر کیلئے ہنسنے سے توقف اختیار کیا، پھر حضور ﷺ کے قریب ہو کر آہستہ آواز  میں تعجبانہ لہجہ میں کہنے لگا : رات آپ کو بیت المقدس کی سیر کرائی گئی اور  صبح کو  آپ ہمارے سامنے پہنچ بھی گئے؟ پھر مسکرایا اور پوچھنے لگا: اے محمد ﷺ ! اگر میں سب لوگوں کو جمع کروں تو کیا آپ ﷺ وہ بات جو آپ نے مجھے بتائی ہے ان سب کو بھی بتا دیں گے ؟ حضور ﷺ نے  فرما: ہاں۔ میں ان کو بھی بیان کر دوں گا۔ چنانچہ ابو جہل خوشی خوشی لوگوں کو جمع کرنے لگا اور ان کو آنحضور ﷺ کی بتائی ہوئی بات بتانے لگا، لوگوں کا ایک ازدحام  ہو گیا، لوگ  اظہارِ تعجب کرنے لگے اور اس خبر کو نا قابلِ یقین سمجھنے لگے، اسی دوران چند آدمی حضرت ابو بکر صدّیق رضی اللہ عنہ ک پاس پہونچے اور ان کو بھی اس امید پر ان کے رفیق اور دوست کی خبر سنائی کہ ان کے درمیان جدائی اور علیحدگی ہو جائے کیونکہ وہ سمجھ رہے تھے کہ یہ خبر سنتے ہی حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ ، حضور اکرم ﷺ کی تکذیب کر دیں گے لیکن جب حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ نے یہ بات سنی تو فرمایا : اگر یہ بات حضور ﷺ نے فرمائی ہے تو یقیناً  درست فرمائی ہے ۔  

پھر فرمایا تمہارا ستیاناس ہو ! میں تو ان کی اس سے بھی بعید از عقل بات میں تصدیق کروں گا، جب میں صبح و شام آپ ﷺ پر آنے والی وحی کی تصدیق کرتا ہوں تو کیا آپ ﷺ کی اس بات کی تصدیق و تائید نہیں کروں گا کہ آپ ﷺ  کو بیت المقدس کی  سیر کرائی گئی۔

پھر  حضرت ابو بکر صدّیق رضی اللہ عنہ نےا ن کو چھوڑا اور جلدی سے اس جگہ پہونچے جہاں  حضور نبی کریم ﷺ تشریف  فرما تھے اور لوگ آپ ﷺ کے ارد گرد بیٹھے تھے اور حضور ﷺ ان کو بیت المقدس کا واقعہ بیان کر رہے تھے ، جب بھی  حضور ﷺ کوئی بات ارشاد فرماتے تو صدّیق اکبر رضی اللہ عنہ فرماتے   کہ آپ ﷺ نے سچ فرمایا۔ پس اس روز سے آنحضرت ﷺ نے آپ  رضی اللہ عنہ کا نام (الصدّیق ) رکھ دیا۔

Advertisement



loading...
loading...

Advertisement

Advertisement

ڈیلی نیوز پاکستان

ایک ایسی ویب سائٹ جہاں آپکو ہر اھم خبر بروقت ملے خبر سیاست سے متعلق ہو یا معیشت سے ملکی ہو یا غیر ملکی یا بین الاقوامی معیشت کے عنوان سے ہو یا معاشرت کے کھیل کی خبریں ہوں یا عوامی مسائل کی الجھنیں ہم آپکے سامنے پیش کرتے ہیں ہر ضروری اور غیر معمولی نیوز اپڈیٹس تجزیے تبصرے مکالمے مباحثے بلاگز مضامین مقالات بروقت برموقع برمحل
Top